پنجاب کے نگران وزیر اعلیٰ کیلئے پی ٹی آئی نے اپنے پسندیدہ ناموں کا اعلان کردیا

اسلام آباد: تحریک انصاف نے نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کیلئے سینئر دفاعی تجزیہ کار حسن عسکری اور سابق آئی جی خیبرپختونخواہ ناصر درانی کے ناموں پراتفاق کرلیا ہے،،پی ٹی آئی اپنے ان ناموں کو نامزدگی کیلئے الیکشن کمیشن کو بھیجے گی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق تحریک انصاف نے پارٹی میں مشاورت کے بعد ایک بار پھرنگراں وزیراعلیٰ پنجاب کیلئے دو نام طے کرلیے ہیں۔

ان ناموں میں ڈاکٹر حسن عسکری اور ناصر درانی کے نام شامل ہیں۔ پی ٹی آئی کے مطابق ڈاکٹر حسن عسکری اور ناصر درانی اچھی شہرت کی حامل شخصیات ہیں۔ ناصردرانی سابق آئی جی پولیس خیبرپختونخواہ بھی رہ چکے ہیں۔ واضح رہے تحریک انصاف نے اس سے قبل نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کیلئے ناصر محمود کھوسہ کا نام دیا تھا۔ جس پر وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کے درمیان اتفاق کے بعد باقاعدہ پریس کانفرنس کے دوران اس نام کو پبلک کردیا گیا۔
تاہم پی ٹی آئی کے مطابق انہیں سوشل میڈیا پر ناصر محمود کھوسہ کا نام نامزدکرنے پر شدید تنقید کا سامنا رہا ہے۔ جس پرتحریک انصاف ناصر کھوسہ کے نام کو واپس لینے پر مجبور ہوئی۔ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی زیرصدارت اجلاس میں طے پایا کہ ناصر کھوسہ کا نام واپس لیا جائے۔ بعدازاں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے اپنے ہی نامزد کردہ نگران وزیراعلیٰ ناصر کھوسہ کے نام کو واپس لینے کا اعلان کردیا۔
جس پرسیاسی جماعتوں اور تجزیہ کاروں نے تحریک انصاف کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔جبکہ دوسری جانب وزیرقانون پنجاب رانا ثناء اللہ نے ناصر کھوسہ کے نام کو واپس لینے سے انکار کرتے ہوئے کہاکہ تحریک انصاف نے نگران وزیراعلیٰ پنجاب ناصر محمود کھوسہ کی نامزدگی پر مذاق کیا ہے۔ نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کی نامزدگی ایک آئینی و قانونی طریقہ کے تحت کی گئی ہے۔
جس کے باعث نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کا نام واپس لینے کی اب کوئی گنجائش نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف اب جو مرضی کہتی رہے کہ ہم نے جلد بازی میں نامزدگی کردی یا جو کچھ مرضی کہے۔ اب نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کی جس پرآئین کے تحت نامزدگی ہوئی ہے اسی طرح ان کی نامزدگی کا نوٹیفکیشن بھی جاری کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے ساتھ اب نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کے نام پر کوئی مشاورت یا نظر ثانی نہیں کی جائے گی۔وزیرقانون پنجاب رانا ثناء اللہ نے واضح کیا کہ یہ ممکن ہی نہیں ہے کہ اب نگراں وزیراعلیٰ کے نام پردوبارہ مشاورت کی جائے، یانام واپس لے لیا جائے۔
یہ خبر جس ویب سائٹ سے لی گئی ہے اس کا لنک یہاں ہے. شکریہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.