اب کوشش کی جا رہی ہے کہ سارا شریف خاندان ہی جیل کی ہوا کھا لے

اسلام آباد : نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے معروف صحافی کاشف عباسی نے کہاکہ جب نواز شریف کو نا اہل قرار دیا گیا تو اتنا افسوس ان کو نواز شریف کی نا اہلی پر نہیں تھا جتنا افسوس ان کو شہباز شریف کے وزیرا عظم بننے کا تھا ، ان کا خیال یہ تھا کہ اب شہباز شریف اور نصرت شہباز آ کر وزیر اعظم ہاؤس میں رہیں گے۔

جس پر محمدمالک نے کہا کہ میرے پاس ایک خبر ہے لیکن مجھے یقین نہیں ہے کہ یہ ایک خبر ہے یا افواہ ہے۔ مجھے پتہ چلا ہے کہ یہاں تک کہ حسین نواز کا بیٹا اور مریم نواز کی بیٹی کی آپس میں کوئی بول چال نہیں ہے ، کاشف عباسی نے کہا کہ اب ان کی کوشش ہے کہ خاندان بٹ تو رہا ہی ہے ، سارے کے سارے ہی جیل میں جائیں۔ اگر ایسا ہوا تو یہ لوگ کس کے نام پر ہمدردی سمیٹیں گے۔
لوگ کس کے ساتھ ہمدردی کریں گے ، اگر نواز شریف کو جیل ہو جاتی ہے تو پیچھے شہباز شریف بچیں گے ۔ تو کیا شہباز شریف اپنے بھائی کے لیے ہمدردی سمیٹنے کے لیے باہر نکلیں گے ؟اس وقت ہر کوئی اپنی اپنی ذات کو بچانے میں مصروف ہے ۔ سعد رفیق اور آصف کرمانی میں تلخ کلامی ایسے ہی نہیں ہوئی تھی۔ بہت سی باتیں نواز شریف کی رضامندی سے کہی گئی ہیں، ان کے لیے کون باہر نکلے گا؟ خیال رہے کہ گزشتہ روز مبشر لقمان نے بھی اپنے پروگرام میں انکشاف کیا تھا کہ حسن نواز اور مریم نواز میں ٹیلی فون پر سخت لڑائی ہوئی ہے۔
حسن نواز نے مریم نواز کو فون کر کے کہا ہے کہ تم نے پورے خاندان کی میراث اور میرے باپ کی سیاست کو دفن کر دیا ہے ۔ تمہیں لندن آنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے ،ہاں اگر تمہیں کوئی خبر آگئی تو تم سیاست چمکانے کے لیے ضرورآ جانا ۔ دوسری جانب حسین نواز نے اپنے والد سے گفتگو میں پاکستان آنے سے صاف انکار کر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ میری لندن میں بہت اچھی زندگی گزر رہی ہے۔وہ ان مسئلوں میں نہیں پڑیں گے اور نہ ہی پڑنا چاہتے ہیں، حسین نواز نے اپنے والد سے کہا کہ میرا سیاست سے کوئی لینا دینا نہیں ہے،نہ ہی میں پاکستان کا شہری ہوں اور نہ ہی میں نے پاکستان میں کوئی کاروبار کرنا ہے،نہ میرے یہاں کے بیوی بچے ہیں، نہ میری یہاں کوئی جائیداد ہے،تو میں کیوں پاکستان آؤں؟
یہ خبر جس ویب سائٹ سے لی گئی ہے اس کا لنک یہاں ہے. شکریہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.