(ن) لیگی قیادت کو الیکشن 2018 میں شکست ۔۔۔ خواجہ سعد رفیق کے انکشاف سے تمام افواہیں سچ ہو گئیں

لاہور (ویب ڈیسک) وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کہتے ہیں کہ دعا کریں اس ملک میں الیکشن وقت پرہوجائیں،ملک کے تمام ذمہ دار اپنے اپنے دائرے میں رہ کر کام کریں۔انہوں نے لاہورمیں اپنے انتخابی حلقے میں ایک اسکول کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اب رشتہ داری اور برادری پر ووٹ نہیں ملتا،کام پر ووٹ ملتا ہے۔وزیر ریلوے کوشش کی جارہی ہے کہ ہمیں بدنام کرکے لوگوں کو ہم سے دور کردیا جائے، بھٹو کے مرنے سے پیپلزپارٹی ختم نہیں ہوئی،مزید مضبوط ہوئی تھی۔سعد رفیق نے مزید کہا کہ مہربانی ہو آصف زرداری کی جنہوں نے پیپلزپارٹی کا ستیاناس کر دیا، زرداری صاحب کراچی کا کچرا اٹھائیں،

عمران خان پشاور کے آدم خور چوہے ماریں۔ان کا کہنا ہے کہ گالیاں دے کر ووٹ نہیں ملتا،ووٹ خراب ہوتا ہے،دعویٰ کرتا ہوں کہ عمران خان کو جتنے ووٹ پہلے ملے تھے اب نہیں ملیں گے۔وزیر نے مزید کہا کہ عمران خان میں بڑے پن کی خصوصیت نہیں، ان کی حرکتیں 18سال کے لڑکے جیسی ہیںان کی جوانی ختم ہی نہیں ہو رہی۔انہوں نے کہا کہ اس قسم کا آدمی میئر نہیں بن سکتا وزیراعظم کیسے بنے گا،وزیراعظم بننا ہے تو گالی دینا چھوڑو۔سعد رفیق نے دعویٰ کیا کہ شہبازشریف 2018ء میں مسلم لیگ نون کی طرف سے وزیراعظم کے امیدوار ہوں گے۔ وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کا کہنا ہے کہ عمران خان کسی شہر کے میئرنہیں بن سکتے اور کہتے ہیں کہ انہیں وزیراعظم بنادیاجائے، کھڑے رہیں تو مارتے ہیں جواب دیں گے تو کہتے ہیں گستاخ ہو۔وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ہم ووٹ مانگتےہیں اورلوگ دیتے ہیں،

اس کا ایک مقصد تو ہوگا، ووٹ کی طاقت سے ہم اپنا ملک کا نظام چلاتے ہیں اور ووٹ سےنمائندےاورمشکلات حل کی جاتی ہیں۔ خواجہ سعدرفیق کا کہنا تھا کہ یہ لوگ دھرنے نہ دیتے ہمیں کام کرنےدیتے اور ہم پر ہر وقت تنقید نہ کرتے تو آج لوڈشیڈنگ کا 100فیصد خاتمہ ہوتا، روز ٹی وی پرگالیاں دیتے ہیں،لوگ احتجاج اورسڑکیں بند کرتے ہیں۔وزیر ریلوے نے کہا کہ ہمیں بولنے کی اجازت تک نہیں دی جاتی، ساری زندگی کام کیااب یہ کام چھوڑبھی نہیں سکتےہیں، کھڑے رہیں تو مارتے ہیں جواب دیں گے تو کہتے ہیں گستاخ ہو۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں ایل این جی لے کر آئے ہیں، لاہور کے حالات بدل گئے مگر کراچی کےحالات وہی ہیں، پنجاب کےاسپتالوں میں صرف پنجاب کے مریض نہیں ہوتے، کےپی،سندھ سمیت پورے پاکستان کے مریض آتے ہیں۔سعدرفیق نے کہا کہ عمران خان اورزرداری نے اپنے صوبوں میں اسپتال نہیں بنائے، لوگوں نے پیپلزپارٹی کوفارغ کردیا ہے، اب برادری،رشتہ داری پر نہیں کام پر ووٹ ملتا ہے، اب جھوٹے الزامات لگا کر ووٹ نہیں ملتا۔وفاقی وزیر ریلوے کا مزید کہنا تھا کہ نوازشریف اور ہمیں عدالتوں میں گھسیٹاجارہاہے آپس کی لڑائی میں ہم سب ہارجائیں گے، گھرکی لڑائی کو ختم کر کے آئین کے دائرے میں رہ کرکام کریں۔انھوں نے کہا کہ ہمیں صرف اس لیے گھسیٹا جارہاہے تاکہ عوام ہم سےمتنفرہوجائیں۔ بھٹو کو پھانسی دی گئی تو پیپلزپارٹی مزید مضبوط ہوئی۔ زرداری کراچی کا کچرا اٹھالیں،عمران کچھ نہ کریں کم از کم پشاورکے چوہے ہی مار لیں، عمران خان کسی شہر کے میئرنہیں بن سکتے اور کہتے ہیں کہ انہیں وزیراعظم بنادیاجائے۔
یہ خبر جس ویب سائٹ سے لی گئی ہے اس کا لنک یہاں ہے. شکریہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.