پنجاب میں اصل وزیر راناثنااللہ ہے کیوں نہ انہیں بلالیں، سپر یم کو رٹ

اسلام آباد: بنی گالہ تعمیر ات کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ کیوں نہ رانا ثنااللہ کوبلالیں، پنجاب میں اصل وزیر راناثنااللہ ہے،مرکزاورصوبے میں حکومت انہی کی ہے، عدالت نے حکام کو ہدایت کی ہے کہ آئندہ سماعت تک تمام مسائل کاحل لے کرآئیں جن کوبلاناہے ان کے نام دے دیں مسائل کاحل نکالیں بصورت دیگرقانون اپناراستہ خود بنائے لے گا، بنیادی حقوق یامفادعامہ کے مقدمات میں التوانہیں دیں گے۔

منگل کے روز بنی گالہ تعمیرات تجاوزات کیس کی سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی سماعت کے دوران ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت سے کہا کہ ڈاکٹر طارق فضل چوہدری سے رابطہ نہیں ہو سکا طارق فضل چوہدری بیرون ملک ہیں مزید وقت دے دیں جس پر چیف جسٹس نے کہا وقت ہی تو نہیں ہے ہم تو آج اس کیس کو نمٹانا چاہتے تھے آج تمام فریق بیٹھ جائیں اور مسائل کا حل نکالیں آج فریقین کو سن کر فیصلہ کر لیتے ہیں چیف جسٹس نے کہا کہ تین مسلے ہیں ایک ایشو بوٹینیکل گارڈن میں تجاوزات کا ہے دوسرا ایشو غیر قانونی تعمیرات کا ہے، جو تعمیرات ہو چکی ہیں، انکو ریگولر کریں یا جرمانہ کریں تیسرا ایشو راول ڈیم میں گندے پانی کا ہے اس کیس کو مزید لمبا نہیں کر سکتے چیئرمین سی ڈی اے نے عدالت کو بتایا کہ غیر قانونی تعمیرات کو ریگولر کرنے کے لیے وفاقی حکومت کو خط لکھیں گے، ریگولر کرنے سے قبل سیٹلائٹ سروے کرانا پڑے گا جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ خط لکھنے سے بہتر ہے فائل لے کر خود وزارت چلے جائیں ہر چیز کا حل موجود ہے لیکن کام کرنے کا عزم ہونا چاہیے دوران سماعت سرکاری وکیل نے حد بندی کے معاملے پر چیف سیکرٹری پنجاب کو بلانے کا کہا تو چیف جسٹس نے کہا کہ کیوں نہ رانا ثنااللہ کوبلالیں، پنجاب میں اصل وزیر راناثنااللہ ہے مرکزاورصوبے میں حکومت انہی کی ہے آئندہ سماعت تک تمام مسائل کاحل لے کرآئیں جن کوبلاناہے ان کے نام دے دیں مسائل کاحل نکالیں بصورت دیگرقانون اپناراستہ خود بنائے گابنیادی حقوق یامفادعامہ کے مقدمات میں

التوانہیں دیں گے عدالت نے راول ڈیم پرسرکاری اراضی لیز پرلینے والوں کونوٹس جاری کردئیے چیف جسٹس نے کہا کہ اصل ایشو راول ڈیم کو گندگی سے بچاناہے مہربانی کرکے جھیل میں گنداپانی روکنے کاپلان دیاجائے جس پر چئیرمین سی ڈی اے نے صفائی پیش کرتے ہوئے کہا کہ راول ڈیم کوآلودہ پانی سے بچانے کے لیے مقامی مکین گھروں میں سیپٹک ٹینک بنائیں گے جس پر جسٹس عمر عطابندیال نے کہا سیپٹک ٹینک بنانا عارضی حل ہے بعد ازاں عدالت نے ایڈیشنل اٹارنی جنرل کی درخواست پر کیس کی سماعت منگل تک ملتوی کردی۔
یہ خبر جس ویب سائٹ سے لی گئی ہے اس کا لنک یہاں ہے. شکریہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.