بھارت ہر سال کالا باغ ڈیم کی مخالفت کرنیوالوں کو کتنے ارب روپے دے رہا ہے،سنسنی خیز انکشاف‎

بھارت ہر سال کالا باغ ڈیم کی مخالفت کرنیوالوں کو کتنے ارب روپے دے رہا ہے،سنسنی خیز انکشاف‎

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) بہاول پورچیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سابق صدر ظفرشریف نے کہاکہ بھارت ہر سال 18اربروپے کالاباغ ڈیم کی مخالفت کرنے والوں میں تقسیم کر رہا ہے۔ سوچی سمجھی سازش کے تحت قومی مفاد کے اہم منصوبے کو سیاسی بنادیا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ کالاباغ ڈیم ملکی معیشت کے لئے انتہائی ناگزیر ہے۔اس حوالے سے حکومت اتفاق رائے پیدا کرے۔ظفر شریف نے مزید کہا کہ کالاباغ ڈیم کی تعمیر کا سب سے زیادہ فائدہ سندھ اور خیبر پختونخواہ کے عوام کو ہوگا

اور اس کی سب سے زیادہ مخالفت بھی وہاں کی قوم پرست جماعتیں کررہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان دشمن قوتیں نہیں چاہتیں کہ پاکستان ترقی کرے۔کالاباغ ڈیم کی تعمیر سے60لاکھ سے زائد بنجر زمین قابل کاشت بن سکتی ہے جس میں سےصرف19فیصد پنجاب اور باقی دیگر صوبوں کو فائدہ ہوگا۔اس کی مخالفت کرنے والوں کو معلوم ہی نہیں کہ وہ کس بنیاد پر اس کے خلاف آواز اٹھا رہے ہیں۔ظفر شریف نے انکشاف کیا 128ارب روپے کی لاگت سے شروع ہونے والے منصوبے کو چھ سال میں مکمل ہونا تھا جس سے سالانہ33ارب 20کروڑ کی آمدنی ہونی تھی مگر سابقہ حکومتوں کی نااہلی کے باعث آج تک اس منصوبے پر کام شروع نہیں سکا۔انہوں نے کہاکہ اس حوالے سے ایک کمیٹی بنانے کی ضرورت ہے جو لوگو ں کے تحفظات کو دور اور اس کی تعمیر میں حائل رکاوٹیں ختم کرے۔تمام ٹیکسز کوشامل کرنے کے باوجود اس ڈیم سے حاصل ہونے والی بجلی 50پیسے فی یونٹ سے زیادہ کی نہ ہوگی۔جس سے ملک میں جاری انرجی بحران ختم کرنے میں مددملے گی۔اس لئے کالا باغ ڈیم کو فوری تعمیر کیا جائے تاکہ ملک توانائی کے بحران سے باہر نکل سکے۔‎

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.