سینٹ کا ان کیمرہ اجلاس : 4 گھٹنے تک جاری رہنے والے اجلاس میں کیا کچھ ہوا؟ اگلے دو روز میں کیا ہونے والا ہے؟ میجر جنرل آصف غفور نے اعلان کر دیا

سینٹ کا ان کیمرہ اجلاس : 4 گھٹنے تک جاری رہنے والے اجلاس میں کیا کچھ ہوا؟ اگلے دو روز میں کیا ہونے والا ہے؟ میجر جنرل آصف غفور نے اعلان کر دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ سینیٹ میں آج کی کارروائی کے حوالے سے ایک دو روز میں مکمل بریفنگ دیں گے۔ انھوں نے کہا کہ ان کیمرہ سیشن کی بات باہر نہیں کی جاتی اور 18 ستمبر کو پارلیمنٹرینز جی ایچ کیو آئے

اور دعوت دی تھی جبکہ آرمی چیف نے کہا تھا کہ انھیں بلایا جائے گا تو وہ ضرور آئیں گے۔ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق تمام سوال میرٹ پر تھے اور آرمی چیف نے سب کو تفصیلی جوابات دیے اور جب تک ہم ایک ہیں ہمیں کوئی شکست نہیں دے سکتا۔ ڈی جی ایم او نے سیکیورٹی کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی۔یاد رہے کہ آج چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی کی زیرصدارت سینیٹ کے پورے ایوان پر مشتمل کمیٹی کا اجلاس تقریباً ساڑھے 4 گھنٹے تک جاری رہا جس میں آرمی چیف نے قومی سلامتی اور اپنے بیرون ملک دوروں سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی۔خیال رہے کہ گذشتہ ہفتے سینیٹ سیکریٹریٹ کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا تھا کہ پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ پاکستان سمیت خطے کی سیکیورٹی صورتحال کے حوالے سے براہِ راست پارلیمنٹ کو اعتماد میں لینے کے لیے سینیٹ کمیٹی کو بریفنگ دیں گے۔ واضح رہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی بریفنگ پر سینیٹرز نے اطمینان کا اظہار کیا ہے۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے سینیٹ کمیٹی کو قومی سلامتی سمیت دیگر امور پر طویل بریفنگ دی۔سینیٹ کی دفاعی کمیٹی کے چیرمین مشاہد حسین سید نے

بریفنگ کا احوال بتاتے ہوئے کہا کہ آرمی چیف کی بریفنگ کے دوران اتنی تفصیلی اور کھل کر بات ہوئی، یہ پہلی مرتبہ ہوا، کوئی ایسا مسئلہ نہیں تھا جس پر سوال نہیں کیا گیا اور آرمی چیف نے جواب نہ دیا ہو۔مشاہد حسین نے کہا کہ بریفنگ میں قومی سلامتی، دہشت گردی کے خلاف جنگ، امریکا سے تعلقات، افغان حکمت عملی، بھارت، مشرقی وسطیٰ کے مسائل اور ملک کے اندرونی معاملات سمیت سب پر بات ہوئی۔ان کا کہنا تھا کہ بریفنگ میں بہت اچھا ماحول رہا، سب بہت مطمئن ہیں، بریفنگ کے دوران قہقہے بھی لگ رہے تھے، آرمی چیف نے کہا کہ وہ کھل کر پارلیمنٹ کی بالادستی کو مانتے ہیں۔دفاعی کمیٹی کے چیرمین نے مزید کہا کہ یہ سول ملٹری ریلیشن کے لیے اچھی بات ہے، آج تمام خوف و خدشات سب دور ہوگئے ہیں، واضح ہوگیا کہ پاکستان ایک جاندار جمہوریت ہے اور تمام ستون آئین کےمطابق کام کررہے ہیں، ملک میں جمہوری عمل آگے چلے گا، آج ہم آہنگی کو بہت تقویت پہنچی ہے۔مشاہد حسین کا کہنا تھا کہ یہ بریفنگ عسکری حکام اور پارلیمانی رہنماؤں کے لیے بہت اچھی تھی، آج عسکری حکام اور جمہوریت کے لیے بھی تاریخی دن ہے۔ دوسری جانب پیپلزپارٹی کے رہنما اور سابق چیرمین سینیٹ فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ آرمی چیف نے طویل بریفنگ دی اور یہ پہلی بار ہوا، انہوں نے ہر چیز پر کھل کر بات کی، تمام سینیٹرز نے سوالات کیے، جنرل باجوہ نے بڑا تحمل مزاجی کے ساتھ تفصیلاً جواب دیا، جہاں جہاں ڈی جی آئی ایس آئی کی ضرورت پڑی انہوں نے بھی بات کی، آج سب کے خدشات دور ہوگئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.