سانحہ ماڈل ٹاؤن : انصاف نہیں ملا۔۔۔کہہ کر ڈاکٹر طاہر القادری نے تہلکہ خیز اعلان کر دیا، ایک اور ڈیڈ لائن بھی جاری کر دی

سانحہ ماڈل ٹاؤن : انصاف نہیں ملا۔۔۔کہہ کر ڈاکٹر طاہر القادری نے تہلکہ خیز اعلان کر دیا، ایک اور ڈیڈ لائن بھی جاری کر دی

لاہور(ویب ڈیسک) ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا ہے کہ حکمرانوں نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کو غیر سنجیدہ لے رکھا ہے لیکن اب شہداء کے انصاف میں غیر ضروری تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی۔ تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا ہے ماڈل ٹاؤن میں 14 بے گناہوں کی لاشیں گرائی گئیں،

حکمرانوں نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کو غیر سنجیدہ لے رکھا ہے لیکن اب شہداء کے انصاف میں غیر ضروری تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی، سانحہ ماڈل ٹاؤن کے ذمہ دارن 31 دسمبر تک عہدے چھوڑ دیں۔سربراہ عوامی تحریک نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا سیکرٹری داخلہ اور محکمہ پولیس وزیراعلیٰ کے ماتحت ہے، کیا وزیر قانون پنجاب وزیراعلیٰ کے دائرہ اختیار سے باہر ہیں، کیا افسران اور شہبازشریف کے درمیان رابطہ نہیں تھا؟۔ انہوں نے کہا ہے کہ لاہور میں میڈیا سے بات چیت میں انہوں نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن میں 14بےگناہوں کی لاشیں گرا کرسمجھا گیا تھا کہ کوئی انصاف نہیں لےگا۔انہوں نے واضح کیا کہ ساڑھے 3 سال سےانصاف مانگ رہے ہیں اور اب مزید تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی۔ڈاکٹر طاہر القادری نے اگلے لائحہ عمل کے اعلان کا بھی عندیہ دیا۔انہوں نے سابق نواز شریف کو کڑی تنقید کا نشانہ بنا تے ہوئے کہا کہ وہ عدلیہ کے خلاف بغاوت کا ماحول پیدا کرکے عدلیہ کی حرمت کا خون کررہے ہیں۔ واضح رہے کہ اس سے قبل پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے کہا ہے کہ نجفی کمیشن رپورٹ کے بعد شہباز شریف، رانا ثناء اللہ مستعفی ہوں، ماڈل ٹاؤن متاثرین کے لیے

طاہر القادری کے ساتھ مل کر تحریک چلائیں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کوئٹہ میں پی ٹی آئی ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا،جہانگیر ترین نے کہا کہ حکومت ناکام ہوگئی ہے قبل از وقت انتخابات ہونے چاہئیں۔رہنما تحریک انصاف نے کہا کہ حکومتی فیصلے نواز شریف کررہے ہیں، حکومت کو فوری طور پر مستعفی ہوجانا چاہئے۔جہانگیر ترین نے کہا کہ پاکستان میں صرف چہرے تبدیل ہوتے ہیں، ملک کی آخری امید عمران خان ہیں، عمران خان وزیر اعظم بن کر ملک سے کرپشن کا خاتمہ کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ملک میں صلاحیتوں کو استعمال نہیں کیا جاتا، بلوچستان میں لوگ پینے کے پانی کو ترس رہے ہیں، پی ٹی آئی بلوچستان میں منظم ہوگئی ہے، بلوچستان میں پارٹی منظم کرنے میں سردار یار محمد نے کردار ادا کیا، بلوچستان میں آئندہ حکومت ہم بنائیں گے۔ایک سوال کے جواب میں جہانگیر ترین نے کہا کہ سب کچھ ہوسکتا ہے مگر جے یو آئی ف سے اتحاد نہیں ہوسکتا۔ واضح رہے کہ اس سے قبل سربراہ پاکستان عوامی تحریک ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ رپورٹ موصول ہوگئی ہے جو شہبازشریف اور رانا ثناءاللہ کے خلاف ٹھوس شواہد بن سکتی ہے.وہ لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے، سربراہ پاکستان عوامی تحریک کا کہنا تھا کہ عجلت میں کوئی بھی قدم نہیں اٹھانا چاہتے، میرا کنٹینر تیار ہے اور اب کارکنان بھی تیار رہیں انہیں کسی بھی وقت کسی بھی قسم کی کال دی جاسکتی ہے اور جب اصل رپورٹ ملے گی تو کاپی سے اس کا موازنہ کیا جائے گا.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.