شہباز شریف کے منہ سے آرمی چیف کی تعریف سن کر مجھے ایسا لگتا ہے کہ ۔۔۔!عمران خان کا حیرت انگیز تبصرہ، معنی خیز اندازمیں بہت کچھ کہہ ڈالا

اسلام آباد (این این آئی) چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ شہباز شریف کے منہ سے آرمی چیف کی اچانک تعریف ، تعریف کم اور نوکری کی درخواست زیادہ دکھائی دیتی ہے ۔ٹوئٹر پر اپنے بیان میں چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے طنزیہ ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کے منہ سے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کی اچانک تعریف، تعریف کم نوکری کی درخواست زیادہ دکھائی دیتی ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روزباجوہ ڈاکٹرائن سے متعلق سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف

نے کہا تھا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ پروفیشنل آرمی افسر ہیں اور سیدھی بات کرتے ہیں، وہ جو کام کررہے ہیں اس کی تعظیم کرنی چاہئے۔ چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ پنجاب میں ایک شخص روتا پھر رہا ہے مجھے کیوں نکالا، اب آصف زرداری بھی کہے گا مجھے کیوں نکالا اور پھر جیل میں کیوں ڈالا،سندھ کے عوام کے ساتھ جتنا ظلم کیا گیا اتنا کسی اور صوبے میں نہیں ہوا،سندھ کے حالات بلوچستان سے بھی بدتر ہیں، ملک کی دو بیماریاں ہیں ایک پنجاب میں اور دوسرا سندھ میں بیٹھا ہوا ہے، کارکن فکر نہ کریں لمبی اندھیری رات ختم ہونیوالی، نئی روشن صبح آنیوالی ہے،آصف زرداری کا بھٹو فیملی سے تعلق ایسا ہی ہے جیسے کیپٹن صفدر کا شریف فیملی سے ہے،خیبرپختونخوا میں ہمارا ایک بھی مخالف یہ نہیں کہہ سکتا اسے انتقامی کارروائی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔نوابشاہ میں تحریک انصاف کی ممبر سازی مہم سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ سندھ کے حالات خراب ہونے کی وجہ سب سے بڑی بیماری آصف زرداری ہیں کیونکہ یہ لوگ پولیس کے ذریعے انتقامی کارروائی کر کے لوگوں پر ظلم کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخواہ میں ہمارا ایک بھی مخالف یہ نہیں کہہ سکتا کہ اسے انتقامی کارروائی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ آصف زرداری کا بھٹو فیملی سے تعلق ایسا ہی ہے جیسا کیپٹن صفدر کا شریف فیملی سے ہے۔انہوں نے سابق صدر آصف زرداری کو چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ میں تمہارے علاقے سے تحریک کا آغاز کر رہا ہوں، اب تم تیار ہو جاؤ کیونکہ پنجاب میں تو ایک شخص روتا پھر رہا ہے کہ مجھے کیوں نکالا اور اب تم بھی کہو گے کہ مجھے کیوں نکالا اور پھر سے جیل میں کیوں ڈالا۔انہوں نے کہا کہ جتنا ظلم سندھ کے عوام کے ساتھ کیا گیا ہے اتنا کسی اور صوبے کے عوام کے ساتھ نہیں ہوا ۔انہوں نے کہا کہابھی حال ہی میں بلوچستان کا دورہ کر کے آیا ہوں ،سندھ کے حالات تو بلوچستان سے بھی بدتر ہیں۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ بلوچستان میں بھی اتنی غربت نہیں جتنی سندھ میں ہے۔ سندھ کے لوگوں کا پیسہ چوری کر کے بیرون ملک بھیجا گیاہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی دو بیماریاں ہیں ایک فرعون پنجاب میں بیٹھا ہے اور ایک فرعون سندھ میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وہ لوگ ہیں جو کمزور پر ظلم کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں ان فرعونوں کامقابلہ کر کے دکھاؤں گا۔انہوں نے کارکنوں کو امید دلاتے ہوئے کہا کہ کارکن فکر نہ کریں کیونکہ نیا دور آنے والا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لمبی اندھیری رات ختم ہونے والی ہے اور نئی روشن صبح آنے والی ہے۔

یہ خبر جس ویب سائٹ سے لی گئی ہے اس کا لنک یہاں ہے. شکریہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.