چین نے دنیا کی بڑی بڑی عالمی معیشتوں کو پیچھے چھوڑ دیا آئندہ تین برس میں کس چیز کا جڑ سے خاتمہ کر دے گا ؟

بیجنگ(آئی این پی/شِنہوا)چین کی کمیونسٹ پارٹی ( سی پی سی) کی مرکزی کمیٹی کے سیاسی بیورو کے ایک اعلامیہ کے مطابق چین کو اب بھی اپنی غربت مٹائو مہم میں اب بھی کھٹن دشواریوں، فرائض اور چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔اور اس جنگ کے مقابلے کے لیے مزید سخت کوششیں کرنے کی ضرورت ہے۔یہ اعلامیہ چین کی غربت مٹائو کارکردگی کے بارے میں سیاسی بیورو کے اجلاس کے بعد جاری کیا گیا ہے۔اجلاس کی صدارت سی پی سی کی مرکزی کمیٹی کے جنرل سیکرٹری شی جن پھنگ نے کی شرکاء اجلاس نے اس ا مر سے اتفاق کیا کہ

گزشتہ پانچ برسوںمیں چین کی غربت مٹائو کارکردگی میں فیصلہ کن پیشرفت ہوئی ہے۔ اور چین کو چاہیے کہ وہ آئندہ تین برسوں میں غربت کا کلی قلعقمع کردے۔ چین 2020تک غربت کے مکمل خاتمے کا ارادہ رکھتا ہے 2017کے وآخر تک 2012میں98.99ملین کے مقابلے میں غریب شہریوں کی تعداد 30.46ملین تھی۔اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ تاہم غربت مٹائو کے بارے میں اب بھی اہم مسائل موجود ہیں۔جن میں پالیسی پر عمل درآمد میں ناکامی اور غربت امدادی فنڈ کا غلط استعمال کے علاوہ کاروائی برائے کاروائی ،نوکر شاہیازم اور دروغ گوئی شامل ہیں۔

یہ خبر جس ویب سائٹ سے لی گئی ہے اس کا لنک یہاں ہے. شکریہ

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.