احد چیمہ کی گرفتاری کے بعد حکمران جماعت کو اب تک کا سب سے بڑا جھٹکا،لیپ ٹاپ اور موبائل فون سے کیا کچھ برآمد ہوا؟ کھلبلی مچ گئی

لاہور(نیوزڈیسک) آشیانہ ہاؤسنگ سکیم میں مبینہ کرپشن کے الزامات میں ملوث سینئر بیورو کریٹ احد چیمہ کے زیر استعمال موبائل فون اور لیپ ٹاپ کا ڈیٹا حاصل کرنے کے بعد نیب لاہور کی تحقیقاتی ٹیم نے اس ڈیٹا کی روشنی میں تفتیش کا دائرہ وسیع کر دیا ہے، ذرائع کیمطابق نیب لاہور کی تحقیقاتی ٹیم کی جانب سے حاصل کیے گئے ڈیٹا میں ملزم بیورو کریٹ احد چیمہ کی پنجاب حکومت کی بعض اعلیٰ شخصیات کے درمیان ہونے والیگفتگو کے ریکارڈ سمیت آشیانہ ہاؤسنگ سکیم اور دیگر ترقیاتی منصوبوں سے متعلق ریکارڈ شامل ہے۔دریں اثنا پاکستان کے موقر قومی اخبار

روزنامہ نائنٹی ٹو نیوز کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ آشیانہ اقبال ہاؤسنگ سکیم میں کرپشن میں ملوث ہونے پر گرفتار سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ کے خلاف چند روز میں مزید 4ریفرنس دائر کئے جائیں گے جبکہ ملزم کے دو ممالک ترکی اور پرتگال میں بینک اکاؤنٹس کا کھوج بھی لگا لیا گیا ہے۔ مزید سینئر افسران کی مختلف پراجیکٹس میں مبینہ کرپشن پر گرفتاری بھی متوقع ہے۔ اخبار کی تحقیقات کے مطابق نیب پنجاب نے احد چیمہ کے خلاف 4مزید ریفرنسز دائر کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے۔ ان ریفرنسز میں لاہور میٹر بس ، حویلی بہادر شاہ پاور پلانٹ ، اورنگ لائن میٹرو ٹرین اور رنگ روڈ تعمیر کا منصوبہ شامل ہیں۔ ایک سینئر افسر نے بتایا یہ ریفرنس آشیانہ اقبال میں لئے گئے احمد چیمہ کے 11روزہ جسمانی ریمانڈ کے دوران داخل کئے جائیں گے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ میٹرو بس ملتان، میٹرو بس راولپنڈی ،اسلام آباد اور نندی پور کی انکوائریز نیب میں چل رہی تھیں جن کو باقاعدہ انویسٹی گیشن میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔ ان پراجیکٹس میں مبینہ کرپشن میں ملوث افسران کو چند روز میں گرفتار کیا جا سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب کے چار سینئر افسروں نے راولپنڈی میٹرو ، ملتان میٹرو، نندی پور پلانٹ مکمل کرائے۔ رنگ روڈ منصوبے کی زمین ایکوائر کرانے میں مبینہ کرپشن پر بھی ایک اعلیٰ کو تفتیش کیلئے بلایا جائے گا۔پنجاب کے موجودہ دور کے تین اعلیٰ افسروں کو بہت جلد شامل تفتیش کیا جائے گا۔پنجاب کی پاور کمپنیوں کے دیگر سربراہان کو بھی شامل تفتیش کرنے کے بارے میں چند روز میں فیصلہ ہو جائے گا۔ ایک دوسرے سینئر افسر نینام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ احد چیمہ کی گرفتاری کا فیصلہ چار روز قبل ہو چکا تھا اور ان کو مبینہ طور پر بیرون ملک فرار ہونے سے ایک روز قبل ان کے دفتر سے گرفتار کیا گیا، نیب نے ان کے بیرون ممالک دو اکاؤنٹس کا کھوج بھی لگا لیا ہے۔ پنجاب حکومت میں تعینات ایک سینئر افسر نے بتایاکہ تین روز قبل 180ایچ پر ایک اہم اجلاس ہوا تھا جس میں پنجاب میں اہم پوسٹوں پر تعینات افسران کی متوقع گرفتاری پر تشویش کا اظہار کیا گیا تھا اور اسی اجلاس میں احد چیمہ کے بیرون ملک جانے کی تجویز زیر بحث آئی تھی اور انہوں نے جمعرات کی رات لندن کیلئے فلائی کرنا تھا لیکن اس سے قبل گرفتاری عمل میں آگئی۔احد چیمہ کی گرفتاری پر ان کی عدالت میں پیشی کے دوران شدید ردعمل دکھانے کیلئے ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب کی ہدایت پر لاہور میں تعینات صوبائی افسران کو ایس ایم ایس کے ذریعہ پیغام دیا گیا تھاکہ وہ جمعرات کے روز پینٹ شرٹ اور ٹائی کے لباسمیں اکٹھے ہوں جس سے صوبائی سروس کے افسران نے لاتعلقی کا اظہار کیا۔ جمعرات کے روز چیف سیکرٹری آفس سے تمام ڈویڑنل کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کو ہدایات جاری کی گئیں کہ وہ تمام سول انتظامی افسران (پروونشل مینجمنت سروس، پاکستان ایڈمنسٹریٹو سروس)کو حکم دیں کہ وہ جی او آر ون میں بی کام کلب میں جمع ہو اور دفاتر میں کوئی کام نہ کریں۔ رابطہ کرنے پر پی سی ایس ایسوسی ایشن کے ایک سینئر عہدیدار نے بتای اکہ میسج ہمیں ایا لیک بی اے ای ایسوسی ایشن کی طرف سے کوئی باقاعدہ دعوت نہیں دی گئی جب فارمل دعوت دی جائے گی تو ہم اپنی ایگزیکٹو باڈی کی منظوری سے آئندہ لا ئحہ عمل دیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.