سال 2017 کی آخری شب علی محمدنے عمران خان کو کس حال میں دیکھا کہ علی محمد خان کی آنکھوں میں آنسو آگئے ؟ جان کر آپ کی آنکھیں بھی بھر آئیںگی

سال 2017 کی آخری شب علی محمدنے عمران خان کو کس حال میں دیکھا کہ علی محمد خان کی آنکھوں میں آنسو آگئے ؟ جان کر آپ کی آنکھیں بھی بھر آئیںگی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ڈیسک )2018کی آمد ہو گئی ہے ۔ گزشتہ شب 2017کی آخری شام 31دسمبر کو پاکستان تحریک انصاف کے رہنما رکن قومی اسمبلی علی محمد خان نے ایک ویڈیو کو سوشل میڈیا پر شیئر کیا جس میں انہوں کہا کہ رات کے وقت عمران خان سے میری بات چیت شروع ہو گئی۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ میرے ذہن میں ایک خیال سا آیا ہے کہ جب دو دن قبل میں نے اپنے بیٹوں کی ایک تصاویر دیکھی تھی جس میں وہ اسلام آباد ائیر پورٹ سے لندن واپس جارہے تھے ۔ علی محمد کا کہنا تھا کہ عمران خان کے تاثر سے یہی معلوم ہو رہا تھا کہ
انہوں نے کتنی تکلیف سے اپنے دونوں بیٹوں کو لندن بھیجا ؟ یہ بتاتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما و رکن قومی اسمبلی محمد علی کی آنکھوں سے آنسو جاری ہو گئے ۔ ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کئی سالوں سے پاکستان میں اکیلئے رہ رہے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ میں سمجھ سکتا ہوں کہ انہوں کتنی مشکل سے اپنے بیٹوں کا لندن واپس بھیجا ہو گا ۔ میں پاکستانیوں اور تحریک انصاف کے لوگوں سے پوچھنا چاہتا ہوں کہ مجھے بتائیں کہ جو عہدوں کیلئے بھاگ دوڑ میں مصروف ہیں ، جنہوں نے اپنی پارٹی میں گروپس بنائے ہوئے ہیں ۔ کیا وہ اپنے اور اپنے لیڈر کیساتھ دھوکہ نہیں کر رہے ؟ ۔ محمد علی کا کہنا تھا کہ میں اکثر عمران خان کے بارے میں سوچتا ہوں کہ وہ یہ قربانی کس کیلئے دے رہے ہیں ؟صرف اس قوم کیلئے۔قوم کی ہمیشہ سے بدقسمتی رہی ہے کہ مشکل سے کوئی لیڈر پیدا نہیں ہوتا اور اگر کوئی اچھا لیڈر مل جائے تو اس کی قدر نہیں کرتی۔ انہوں نے کہا کہ اللہ کا کرم ہے کہ بہت لوگ قدر کرتے بھی ہیں۔ سوال یہ ہے کہ ایک انسان جس کے پاس اللہ کا دیا ہوا سب کچھ ہے پھر وہ اکیلے گھر میں کیوں رہتا ہے؟ کوئی دکھ بانٹنے والا نہیں ان کے پاس اس قربانی کی کسی کو قدر ہے؟ تحریک انصاف کے رہنما علی محمد خان نے کہا کہ میری قوم سے گزارش ہے کہ عمران خان کی قدر کریں اور سہی معنوں میں عمران خان کا ساتھ دیں اور اسے اس کے مشن میں کامیاب کریں۔وہ اکیلئے گھر میں رہ کر یہ سب قربانیاں صرف اپنی عوام کیلئے سہہ رہے ہیں ۔ وہ ان کی ان قربانیوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھیں اور ان رائیگاں نہ جانے دیں ۔ ‎

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.